ترکی اور روس کے نمائندے بااہم مذاکرات کے لئےموسکو میں اکٹھا ہونگے :ایردوان

0
79
Russian President Vladimir Putin, right, and Turkish President Recep Tayyip Erdogan shake hands after a joint news conference after their talks in the Bocharov Ruchei residence in the Black Sea resort of Sochi, Russia, Tuesday, Oct. 22, 2019. Erdogan says Turkey and Russia have reached a deal in which Syrian Kurdish fighters will move 30 kilometers (18 miles) away from a border area in northeast Syria within 150 hours. (Turkish Presidential Press Service/Pool Photo via AP)

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ ترکی اور روس کی وزارت خارجہ، وزارت دفاع اور خفیہ ایجنسیوں پرمشتمل نمائندے ماسکو میں مذاکرات کے لئے اکٹھا ہونگے۔

صدرایردوان نے روس کے صدرولدیمارپوتن کے ساتھ ٹیلی فونک ملاقات کی جس میں شام کے شہر ادلب کی حالیہ صورتحال پر بات ہوئی ۔

ترکی قومی اسمبلی کے جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی گروپ اجلاس کے بعد اخباری نمائندو سے بات چیت میں صدر ایردوان نے صدر پوتن کے ساتھ ٹیلی فونک ملاقات کا بھی جائزہ لیا۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم نے صدر پوتن کے ساتھ اس وقت ادلب میں جاری مرحلے کا جائزہ لیا۔ جائزے میں ہم نے ترک فوجیوں کو شامی فورسز حتّیٰ روس کی طرف سے پہنچائے گئے نقصان پر غور کیا۔ اس معاملے میں ہمارے درمیان ترکی اور روس کی وزارت خارجہ ، وزارت دفاع اور خفیہ ایجنسیوں کے وفود کی ماسکو میں ملاقات پر اتفاق طے پایا ہے۔ ان بین الوفود مذاکرات کا انعقاد بہت جلد کیا جائے گا۔

روس کے صدارتی پیلس سے جاری کردہ بیان کے مطابق بھی دونوں رہنماوں نے مذاکرات میں ادلب کی حالیہ صورتحال پر غور کیا۔

بیان کے مطابق صدر ایردوان اور صدر پوتن نے ادلب میں استحکام کے لئے باہمی تعاون کے موضوع پر اتفاق کیا ہے۔

loading...

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here