ماب لنچنگ کے خلاف سخت قانون بنائے سرکار

0
138

دیوبند،(سمیر چودھری)تنظیم ابنائے مدارس دیوبند کے زیراہتمام گزشتہ شام طلبائے مدارس اور شہر کے لوگوں نے ہجومی تشدد اور زعفرانی دہشت گردی کے خلاف زبردست احتجاجی مارچ کیا،خانقاہ پولیس چوکی پر جمع ہوکر وہاں سے پیدل مارچ اردو دروازہ تک پہنچا ۔جہاں مقامی انتظامیہ کے ذریعہ صدر جمہوریہ ہند اور قومی اقلیتی کمشنر کے نام ایک چار نکاتی میمورنڈم پیش کیا گیا ۔مظاہرین نے اپنے ہاتھوں میں احتجاجی نعرے والے پلے کارڈز لئے ہوئے تھے،جن پر ’’تبریز انصاری کے قاتلوں کو پھانسی دو‘‘،’ ’موب لنچنگ کے خلاف قانون بناؤ‘‘جیسے نعرے لکھے تھے۔اس موقع پرتنظیم کے صدر مہدی حسن عینی قاسمی نے کہا کہ ملک میں مسلمانوں اور دلتوں کو گائے اور جے شری رام کے نعروں کے نام پر جس طرح سے زد و کوب کرکے بھیڑ کے ذریعہ قتل کردیا جارہا ہے یہ نہایت افسوسناک اور قابل مذمت ہے،وزیر اعظم اقلیتوں کو وشواس میں لینے کی بات کررہے ہیں اور ملک کی دوسری سب سے بڑی آبادی خوف و ہراس میں مبتلاکیا جارہاہے،جھارکھنڈ میں تبریز انصاری کا قتل صرف بھیڑ نے نہیں بلکہ پولیس نے بھی کیا ہے،اس لئے آج کے اس احتجاجی مظاہرہ کے ذریعہ ہمارا حکومت سے مطالبہ ہے کہ تبریز انصاری کے قاتلوں کو سزائے موت دیں اور مجرم پولیس اہلکاروں کو جیل کے سلاخوں کے پیچھے ڈالا جائے۔ صدر جمہوریہ کے نام ارسال کئے گئے میمورنڈم میں کہا گیا ہے، ’’ہندوستان ایک جمہوری اور سیکولر ملک ہے ، اس ملک کی آزادی، تعمیر و ترقی میں ہر ہندوستانی چاہے کسی بھی مذہب کو ماننے والا ہو، سبھی نے ہر طرح کی قربانیاں دی ہیں، آج اس ملک کے اکثر لوگ پیار ، محبت کے ساتھ رہتے ہیں۔یہی ہمارے ملک کی پہچان ہے۔ لیکن ایک طبقہ ہندوستان کے امن و امان کو فساد میں بدلنے کا ، ہندوستانیوں میں نفرت پیدا کرنا چاہتا ہے اور کچھ لوگ اس سازش کے جال میں پھنس جاتے ہیں۔میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ آج ملک میں ہجومی تشدد سب سے بڑا مسئلہ ہے جس سے نمٹنے کے لئے ایک بل پاس کرکے مضبوط قانون بنانے کی ضرورت ہے۔ لنچنگ کے شکار لوگوں کے مقدمہ کی سماعت فاسٹ ٹریک کورٹ میں کی جائے اور مقتولین کے اہل خانہ کو پچیس لاکھ روپئے کا معاوضہ اور دو لوگوں کو سرکاری نوکری دی جائے۔ احتجاجی مظاہرہ میں محمد ارسلان نمائندہ ممبر پارلیمنٹ سہارنپور،ایس پی لیڈر حید ر علی، جمال انصاری،سید حارث،سلیم عثمانی اور مولانا محمود الرحمان قاسمی بستوی،سید ذھین احمد،مولانا ابراہیم قاسمی بستوی، فیصل حمید ٹیپو،فیصل نور شبو،طارق انور قاسمی،مصطفی جمیل قاسمی،مہتاب عالم قاسمی،اعجاز قاسمی،عتیق الرحمان قاسمی،فیض الرحمان قاسمی بڑی تعداد میں طلباء اور شہر کے لوگوں نے شرکت کی۔
فوٹو: ہجومی تشدد کے خلاف دیوبند میں احتجاج کرتے ہوئے طلباء وشہر کے لوگ


shahnawaz

loading...

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here