مودی سونامی میں سب بہہ گئے، مقبولیت کا کوئی مقابلہ نہیں کرسکا،کانگریس لیڈر سلمان خورشید کااعتراف

0
131

فرخ آباد (ایجنسی)لوک سبھا انتخابات میں کانگریس پارٹی کی کراری شکست کے بعد سابق وزیر خارجہ سلمان خورشید نے بڑا بیان دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوک سبھا انتخابات میں وزیر اعظم نریندر مودی کی مقبولیت کے سامنے کوئی کھڑا نہیں ہو پایا۔پی ایم مودی کی سونامی میں سب کچھ بہہ گیا۔ پارلیمنٹ میں مودی حکومت کی طرف سے تین طلاق بل لائے جانے کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تین طلاق کو سپریم کورٹ پہلے ہی ختم کر چکا هے۔نئی حکومت پر نشانہ لگاتے ہوئے سلمان خورشید نے کہا کہ مرکزی حکومت سبريمالا مندر کے فیصلے کو پلٹنے کے لیے تیار ہے، جبکہ سپریم کورٹ نے صاف کہا ہے کہ سبريمالا مندر میں خواتین کا داخلہ نہیں روکا جانا چاہئے۔ خواتین کوسبريمالا مندر میں داخل ہونے دینا چاہئے۔ مودی حکومت کو سپریم کورٹ کے فیصلے کو ماننا چاہیے۔ کانگریس صدر راہل گاندھی کے استعفیٰ کے پیشکش پر انہوں نے کہا کہ راہل گاندھی ہم سب کو چھوڑ کر نہیں جائیں، وہ کانگریس کے صدر بنے رہیں۔ کانگریس لیڈر سلمان خورشید مودی کی سونامی کو قبول کرتے ہوئے کہا کہ آج تو ہم یہی جانتے ہیں انتخاب ہوا اور الیکشن میں پی ایم کی مقبولیت اتنی تھی کہ اس کے سامنے کوئی کھڑا نہیں ہو پایا، لیکن ایک اچھی بات ہے کہ سونامی آئی اس نے سب کچھ بہا دیا لیکن کم از کم ہم زندہ رہے اور آپ سے بات تو کر سکتے ہیں۔ پارلیمنٹ میں مودی حکومت کی طرف سے تین طلاق بل لائے جانے کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تین طلاق کو سپریم کورٹ پہلے ہی ختم کر چکا ہے۔ دنیا میں تین طلاق کہیں نہیں ہے۔ ہندوستان میں بھی تین طلاق کہیں نہیں ہے۔ ملک میں تین طلاق کو غلط سمجھا گیا ہے، جو ملک میں ہے ہی نہیں، اس پر تین سال کی سزا دی جا رہی ہے۔ سابق مرکزی وزیر سلمان خورشید انتخابات ہارنے کے بعد ہفتہ کو اپنے آبائی علاقے فرخ آباد پہنچے، جہاں انہوں نے لوگوں کا شکریہ ادا کیا۔ ساتھ ہی اپنے پرانے رشتوں کو اور مضبوط کرنے کی بات کہی۔واضح رہے کہ لوک سبھا انتخابات میں سلمان خورشید کی ضمانت تک ضبط ہو گئی تھی۔ انہیں کل 55 ہزار ووٹ ملے تھے اور وہ چوتھے نمبر پر رہے۔ لوک سبھا انتخابات ہارنے کے بعد ہفتہ کو پہلی بار عوام کے درمیان پہنچے ۔


shahnawaz

loading...

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here